میشا شفیع کی وکیل نے علی ظفر کے الزامات مسترد کردیے

گلوکارہ میشا شفیع کی وکیل نگہت داد نے علی ظفر کی جانب سے عائد کیے گئے الزامات کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی موکل کو عدالت نے طلب ہی نہیں کیا۔ جب عدالت بلائے میشا شفیع ضرور پیش ہوں گی۔

سماء ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے نگہت داد نے کہا کہ علی ظفر کے فیک اکاؤنٹس کے الزامات بے بنیاد ہیں۔ اگر میشا شفیع نے پروپیگنڈا کیا تو دیگر بہت ساری خواتین نے بھی علی ظفر پر ہراسانی کے الزامات عائد کیے ہیں۔ ان سب کے الزامات کو کیسے مسترد کیا جاسکتا ہے۔

اس سے پہلے علی ظفر نے لاہور ہائیکورٹ کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے میشا شفیع کو تنقید کا نشانہ بنایا اور الزام عائد کیا کہ میشیا نے شاید یہ سب کچھ کینیڈا کی امیگریشن کیلئے کیا۔ کیا میشا شفیع ملالہ کی طرح عالمی پذیرائی چاہتی تھیں۔

علی ظفر ماڈل اور گلوکارہ میشا شفیع کے خلاف ہتک عزت کے دعوے کی سماعت کے موقع پر لاہورکی سول عدالت پہنچے تھے۔ ان کے ہمراہ اہلیہ عائشہ فاضلی بھی تھیں۔ اس موقع پرمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے علی ظفر ںے میشا شفیع کے تمام الزامات کو جھوٹ قرار دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ظلم کر نے سے زیادہ ظلم سہنا زیادہ بڑ اگناہ ہے، حق سچ پر ہوں اس لیے عدالت آیا اور جو حق سچ پر نہیں ہوتا وہ بلانے پر بھی عدالت نہیں آتا۔ میرے خلاف جھوٹ پرت مبنی کمپین چلائی گئی اور ابھی تک سوشل میڈیا پر چلائی جا رہی ہے، اس پر بہت سے جعلی اکاؤنٹس بنائے گئے۔

یہ جعلی اکاؤنٹس سائبر کرائم کے تحت آتے ہیں، تحقیقات کیلئے ایف آئی اے میں کیس درج کرایا ہے۔ مجھے دکھ ہے میشا شفیع کے کچھ اتحادی اور ایک خاتون وکیل بھی ان اکاؤنٹس کو فالو کر رہی ہیں اور دکھ ہوتا ہے کہ وہ ٹویٹس کو ری ٹویٹس بھی کر رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بہت حیران ہوتا ہوں، میری آنکھیں کھل گئی ہیں کہ کوئی بھی بیگناہ شریف آدمی کو جس نے 20 سال لگا کر لوگوں میں پیار بانٹا اور پیار پایا ، کوئی بھی اٹھ کر اپنے ذاتی مفاد کے لیے اس پر الزام لگا کر خود امیگریشن کیلئے کینیڈا چلا جائے، کیا اس کی اجازت دی جانی چاہیئے۔

علی ظفر نے کہا کہ نیت کا حال اللہ جانتا ہے لیکن میشا شفیع کی نیت اور ارادے سے متعلق جو حقائق سامنے آئے یہی لگتا ہے کہ سب کچھ مکمل منصوبہ بندی سے مجھے ٹارگٹ کرکے ذاتی مفاد کے لیے کیاگیا، یہ نہیں معلوم کہ اس کے پیچھے کیا مقصد تھا ۔

علی ظفر نے اس حوالے سے ٹوئٹر پر بھی لکھا کہ ملالہ ایک حقیقی جنگجو ہے جو قربانیاں دے کرانصاف اور سچائی کیلئے کھڑی ہے، میشا شفیع جھوٹ بول کراور جعلی اکاؤنٹس کا سہارا لے کر ملالہ نہیں بن سکتیں۔

انہوں نے واضح کیا کہ میشا شفیع کے خلاف ہتک عزت کا دعویٰ دائر کیا تھا، عدالت نے نہیں بلایا پھر بھی یہاں آیا ہوں۔ میشا شفیع کا کیس اور اس کی اپیل مسترد ہو چکی ہے ۔ یہ بات بہت اہم ہے کہ اب معاملہ میشا شفیع کیخلاف ہتک عزت کے دعوے کا ہے۔ قانون کی نظر میں میں بے گناہ ہوں۔ میشا شفیع کے الزامات کی وجہ سے مجھے اور میرے خاندان کو جو ذہنی، نفسیاتی اور مالی نقصان پہنچا، اب وہ اس کا ازالہ کریں۔

علی ظفر کے مطابق ایک سال ہوگیا، ہمارے گواہان 8 بار عدالت آ کر واپس جا چکے ہیں لیکن ان کی جانب سے تاخیری حربے استعمال کیے جا رہے ہیں۔ عدالتوں سے استدعا ہے کہ کیس کا فیصلہ جلد از جلد سنایا جائے تاکہ دنیا کے سامنے میرا سچ اورمیشا شفیع کا جھوٹ سامنے آئے ۔

گلوکار نے میشا شفیع اور ان کے وکلا سے بھی عدالت آکر کیس کا سامنا کرنے کی گزارش کی۔

یا د رہے کہ گلوکاراورفلم سٹارعلی ظفرنے جنسی ہراسانی کے الزامات کے بعد میشا شفیع کے خلاف ایک ارب روپے ہتک عزت کا دعویٰ دائر کررکھا ہے ۔