دہلی میں مسلمانوں کے خلاف ہونے والے تشدد میں مرنے والوں کی تعداد 34 تک پہنچ گئی ہے، 300 سے زیادہ لوگ زخمی ہیں

بھارتی دارالحکومت نئی دلی میں انتہاپسندوں کے ہاتھوں جان سے جانے والوں کی تعداد 3۴ ہوگئی ہے۔

غیر ملکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق نئی دلی کے صرف ایک علاقے گامڑی میں 100 سے زائد انتہا پسندوں نے مسلم اکثریتی علاقے پر دھاوا بول دیا۔

دارالحکومت کے علاقے موج پور، جعفر آباد ، سلام پور اور بابر پور میں سیکیورٹی اہل کار تعینات کردیے گئے۔

دلی کے شمال مشرقی علاقوں میں حالات تاحال معمول پر نہیں آسکے ہیں، لوگ اب بھی خوفزدہ ہیں۔

تشدد والے علاقوں میں بھارتی سیکیورٹی فورسز کی اضافی نفری تعینات ہیں، لیکن اس کے باوجود گزشتہ رات بھی جلاؤ گھیراؤ کے واقعات رونما ہوئے۔

انتہا پسندوں کو کارروائیوں کی کھلی چھوٹ دینے والی دلی پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ تشدد کے معاملے میں اب تک 106 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے اور 18 ایف آئی آر درج کی جاچکی ہیں۔